Reproduction-افزائش نسل

اس تحریر کو سوشل میڈیا پر شیئر کریں

افزائش نسل

تمام جن و انس  افزائش نسل کرتے ہیں۔ حتی کہ پودوں میں بھی افزائش نسل ہوتی ہے۔ ہر جاندار (قسم) کی زندہ چیزیں دوبارہ پیدا کرتی ہیں۔ افزائش نسل کے بارے میں جاننے کےلیے مندرجہ ذیل ملاحظہ فرمائیں.

سپونجز آسان طریقوں سے افزائش نسل  کرتے ہیں۔سپونجز کے جسم پر بڈ بنتے ہیں ۔ مکڑیاں ، پودے اور انسان زیادہ پیچیدہ طریقوں سے افزائش نسل  کرتے ہیں۔ لیکن تولید کے صرف دو بنیادی طریقے ہیں:

اے سیکسوئیل ری پروڈکشن

اے سیکسو ئیل تولید کا مطلب یہ ہے کہ نر اور مادہ کا ملاپ نہیں ہوتا۔ تمام  (نئے حیاتیات) جو نئے پیدا ہوتے ہیں وہ  بالکل اپنے والدین کی طرح  ہوتے ہیں۔ ان سب کے جینز والدین سے مشابہ ہوتے ہیں۔ جین تمام جانداروں کے خلیوں میں پائے جاتے ہیں اور نئی پیداوارکے حوالے کردیئے جاتے ہیں۔

سپانجزافزائش نسل بڈنگ سے کرتے ہیں۔اس کے بعد نیوکلیئس کی تقسیم ہوکر بڈمیں چلاجاتاہے اور پھر جسم سے علیحدہ ہوکر یا بعض اوقات جسم علیحدہ نہیں بھی ہوتے اور وہیں کالونیاں بنالیتی ہیں۔

سیکسوئیل ری پروڈکشن؟

جنسی تولید کا مطلب یہ ہے کہ اس میں نر اور مادہ کا ملاپ ہونا ضروری ہے۔ نر میں جنسی خلیات ہوتے ہیں جن کوسپرم کہا جاتا ہے۔ خواتین میں جنسی خلیات ہوتے ہیں جنھیں ایگزکہتے ہیں۔ جب جانور ملاپ کرتے ہیں تو  نر سپرم اورمادہ ایگ سیلزکا ملاپ ہوتاہے اور نئے خلیات پیدا ہوتے ہیں ۔

نر اور مادہ کے مختلف جین ہوتے ہیں۔ اولاد (بچے) اپنے والدین سے اپنے آدھے جین حاصل کرتے ہیں۔ جین کے دو سیٹ اولاد کو اپنے والدین سے مختلف بناتے ہیں۔

 

انڈے میں سپرم کی فرٹیلائزیشن

کچھ جانوروں میں انڈا مادہ کے جسم سے باہر فرٹیلائز ہوتاہے ۔ ان کی مثالیں ٹوڈز ،مینڈک اور  مچھلی پانی میں انڈے دیتی ہیں۔ نر ان انڈوں کے قریب اپنے سپرمز بہت زیادہ تر تعداد میں خارج کرتے  ہیں۔

بہت سے دوسرے جانوروں میں نر اپنا سپرم مادہ کے جسم کے اندر خارج  کرتا ہے اور انڈا وہاں فرٹیلائزہوتا ہے۔  جن کی مثال انسان اور دوسرے جانور وغیرہ مادہ جسم کے اندرفرٹیلائز  یشن کرتے ہیں۔

کچھ مادہ جانور اپنے جسموں میں سپرم ذخیرہ کرتے ہیں جب تک کہ وہ انڈے دینے کے لئے تیار نہ ہوجائیں۔ مکڑیاں اور ملکہ شہد کی مکھیاں جو سپرمز کو جمع کرتی ہیں۔

فرٹیلائز ڈ ایگز کی بڑھوتری؟

ایک فرٹیلائزڈ شدہ انڈا  ایمبریو بننے کے لئے بار بار  تقسیم ہوتا ہے ۔ ایمبریو مادہ  کے جسم میں بڑھوتری کرتا ہےجن میں میملز اور دوسرے جانور شامل ہیں ۔ انسان ایمبریو کی طرح بڑھوتری کرتے ہیں۔ جب ایک ایمبریومکمل طور پر تشکیل پاتا ہے تو  ماں ایک بچے کو جنم دیتی ہے۔

دوسرے جانور اپنے جسم سے باہر انڈے دیتے ہیں۔ مچھلی ، مگرمچھ ، مینڈک ، کچھوا، مچھلی اور پرندے وہ جانور ہیں جو انڈے دیتے ہیں۔  خول انڈے کومحفوظ رکھتا ہے۔ خول بڑھتے ہوئے ایمبریو کے لئے خوراک مہیا کرتا ہے۔  بڑھنے کے بعد  بچوں کو اپنے خول توڑ کر باہر آنا ہوتاہے۔

پودوں میں افزائش نسل کیسے ہوتی ہے؟

پودے غیر جنسی یا جنسی طور پر دوبارہ تولید کر سکتے ہیں۔ پودے نئے حصوں کو بڑھاتے ہوئے غیر جنسی طریقے سے تولید کرتے ہیں۔ آلو غیر جنسی طریقہ سے تولید کرتے ہیں۔ آلو کو کئی ٹکڑوں میں کاٹ لیں۔ ہر ٹکڑے کو زمین میں رکھ کر مٹی ڈال دیں۔ پانی دینا شروع کردیں جلد ہی آپ آلو کے نئے پودوں کو اگتے ہوئے نظر آئیں گے۔

پودے جو بیجوں سے اگتے ہیں وہ جنسی طور پر تولید کرتے ہیں۔ نر اور مادہ کے حصے کچھ پودوں کے پھولوں میں ہوتے ہیں۔ نر حصے کو اسٹیمن کہا جاتا ہے۔نر کے سپرمز کو پولن کہتے ہیں جبکہ مادہ کے حصے کو پِسٹل کہتے ہیں۔ انڈا پسٹل کے اندر بڑھتا ہے۔ شہد کی مکھیاں ، پرندے ، یہاں تک کہ ہوا بھی پولن کو پسٹل تک لے جاتی ہے ۔

پودوں کی کچھ سپی شیز نر اور مادہ کے پودے مختلف ہوتے ہیں۔ لیکن بہت سی سپی شیز  میں ، نر اور مادہ حصے ایک ہی پودے پر ہوتے ہیں

Post a Comment

0 Comments